Advertisements
IMF mission chief for Pakistan economic policies announce the first instalment of debt of IMF for Islamabad. 160

بجٹ ہماری مشاورت سے تیار کر کے پارلیمنٹ سے منظور کروایا گیا، عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف کے حیران کن انکشافات ۔

ویب ڈیسک۔ واشنگٹن :۔
عالمی مالیاتی فنڈ آئی ایم ایف نے پاکستان کو منظور شدہ چھ ارب ڈالر کی پہلی قسط جاری کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت نے ہماری مشاورت سے مالی سال کا بجٹ تیار کیا اور پارلیمنٹ سے منطور بھی کروا لیا ہے۔
آئی ایم ایف کی جانب سے پاکستان کے ساتھ قرض کے معاہدے کے حوالے سے 96 صفحات پر مشتمل رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستان نے تمام یقین دہانیوں پر عمل درآمد کیا اور بجٹ پروگراپیش ہونے سے قبل بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافہ کیا۔
رپورٹ کے مطابق یقین دہانی کروائی گئی ہے کہ بجلی اور گیس کی مکمل لاگت صارفین سے وصول کی جائے گی اور پٹرولیم مصنوعات پر جی ایس ٹی 17 فیصد سے کم نہیں کیا گائے گا۔
رپورٹ میں  نئے ٹیکسوں کے حوالے سے کہا گیا ہے کہ حکومت نے یقین دہانی کروائی ہے کہ کوئی نئے ٹیکس کی چھوٹ نہیں دی جائے گی۔
آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ  پاکستان نے سرکاری اداروں کی نجکاری ، گیس اور بجلی کی قیمتوں پر سہ ماہی نظر ثانی اور پی آئی اے اور سٹیل ملز کا انٹرنیشل فرم سے آڈٹ کروانے کی بھی یقین دہانی کروائی ہے۔
آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ فنانشل ایکشن ٹاسک فورس ” ایف اے ٹی ایف”  کے ایکشن پلان پر مکمل عمل درآمد کیا جائے گا ،منی لانڈرنگ کو سنگین جرم قرار دیا جائے گا اور اینٹی منی لانڈرنگ فریم ورک کو موثر بنایا جائے گا۔
آئی ایم ایف کے مشن چیف برائے پاکستان ارنسٹو رمیزار رینگو نے اسلام آباد کو قرض کی پہلی قسط چند گھنٹوں میں جاری کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ معیشت میں ٹیکس کا حصہ 1٫7 فیصد تک بڑھانا وقت کی ضرورت ہے۔
واشنگٹن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے آئی ایم ایف مشن چیف برائے پاکستان کا کہنا تھا کہ پاکستان کو ایک ارب ڈالر کی  پہلی قسط چند گھنٹوں میں جاری کر دی جائے گی۔
پریس کانفرنس کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ پاکستان نے معاشی اصلاحات پر توجہ دی ہے اور قرض پروگرام کا مقصد معیشت اور اداروں کو مستحکم کرنا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں