Advertisements
Free Business Listing
The Jammu Kashmir International Lawyers Forum established, the Kashmiri lawyers will fight its own case on every foram 74

جموں کشمیر انٹرنیشنل لائرز فورم قائم ، کشمیری وکلا ءعالمی عدالت انصاف اور ہر فورم پر اپنا مقدمہ خود لڑیں گے۔

  راولپنڈی جموں کشمیر نیوز ٹاکس ۔

کشمیری وکلاء نے جموں و کشمیر انٹرنیشنل لائرز فورم تشکیل دے کر دنیا بھر میں مسئلہ کشمیر کی قانونی جنگ لڑنے کا اعلان کر دیا۔

لائر فورم کا قیام گزشتہ روز یہاں راولپنڈی میں وکلاء کی ایک تقریب کے دوران عمل میں لایا گیا جس میں آزاد کشمیر و پاکستان سے کشمیری وکلاء کی بڑی تعداد نے حصہ لیا۔ لائر فورم کیلئے 30 رکنی کنوینگ کمیٹی کا اعلان کیا گیا جس میں میرپور سے سینئر کشمیری وکلاء خالد رشید چوہدری ایڈووکیٹ، چوہدری محفوظ ایڈووکیٹ، میر خالد محمود ایڈووکیٹ، مرزا امین بیگ ایڈووکیٹ، احمد ہاشمی ایڈووکیٹ، کوٹلی سے اشفاق انجم ایڈووکیٹ، طارق مرزا ایڈووکیٹ، مرزا سعید ایڈووکیٹ، راجہ خورشید ایڈووکیٹ، مظفرآباد سے شاہد بہار ایڈووکیٹ، فیاض جنجوعہ ایڈووکیٹ، راولاکوٹ سے سردار شمشاد ایڈووکیٹ، سردار خاوید شریف ایڈووکیٹ، بیرسٹر عدنان نواز ایڈووکیٹ، سردار خالد محمود ایڈووکیٹ، پلندری سے سردار ظہیر ایڈووکیٹ، ارسلان نواز ایڈووکیٹ، باغ دھیرکوٹ سے راجہ امتیاز خان ایڈووکیٹ، ہجیرہ سے واجد علی ایڈووکیٹ، کراچی سے سالم سلام انصاری ایڈووکیٹ، سردار عارف ایڈووکیٹ، سردار نجیب ایڈووکیٹ، لاہور سے سردار انور ایڈووکیٹ، برطانیہ سے راجہ طاہر بوستان ایڈووکیٹ، بیرسٹر ابرار ایڈووکیٹ، کینیڈا سے سردار ولید بابر ایڈووکیٹ، بیرسٹر حمید بھاشانی ایڈووکیٹ، سپین سے یاسین ایڈووکیٹ، عاطف سیماب ایڈووکیٹ کو شامل کیا گیا ہے۔

اس موقع پر کمیٹی کے سینیر ممبران سردار شمشاد ایڈووکیٹ اور ِالد رشید چوہدری نے میڈیا کو بریفنگ میں جموں و کشمیر لائرز فورم کے اغراض و مقاصد بیان کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کی قانونی محاز پر جنگ، آئین کی بالادستی و قانون کی حکمرانی، عدلیہ کی آزادی اور آزاد کشمیر میں مثالی نظام کا قیام فورم کے مقاصد ہیں جنھیں پایہ تکمیل تک پہنچانے کیلئے بھرپور جدوجہد کی جائے گی۔

ممبران نے کہا کہ تحریک آزادی کشمیر اس وقت تاریخ کے نازک دور سے گزر رہی ہے۔ بھارت نے گزشتہ 56 روز سے مقبوضہ وادی میں کرفیو نافذ کر کے 80 لاکھ کشمیریوں کو محصور کر رکھا ہے۔ مقبوضہ کشمیر اس وقت دنیا کی سب سے بڑی جیل کا روپ دھار چکی ہے لیکن افسوس کہ اقوام متحدہ اور دنیا بھر کی انسانی حقوق کی تنظیموں نے بھارتی ظلم و ستم زبان بند کر رکھی ہے۔ مقبوضہ کشمیر کے لاکھوں اسیر اور وہاں معصوم انسانوں پر بھارتی ظلم و جبر اقوام متحدہ کے قیام پر سوالیہ نشان ہے۔

ایک سوال کے جواب میں کمیٹی ممبران نے کہا کہ ہم مسئلہ کشمیر پر کشمیری عوام کے موقف کے حامی ہیں۔ کشمیری عوام مسئلہ کے حقیقی فریق ہیں اور ہم سمجھتے ہیں کہ مسئلہ کے حل کیلیے کشمیریوں کی رائے کو ہی کو زیادہ اہمیت دی جائے۔ انھوں نے کہا کہ ہم جہاں بھارتی ظلم و جبر کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں وہی حکومت پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ کشمیریوں کو بااختیار بنانے کیلئے آزاد کشمیر حکومت کو تسلیم کرے۔

یہی فارمولہ کے ایچ خورشید مرحوم کا بھی تھا کہ پاکستان اگر آزاد کشمیر و گلگت بلتستان پر مشتمل حکومت قائم کر کے اسے خود تسلیم کرے اور اپنے دوست ممالک سے بھی اسے تسلیم کرائے اگر حکومت پاکستان ایسا کر لے تو کشمیری عوام بھارتی حکومت کے مظالم کو دنیا بھر میں بے نقاب کر سکتے ہیں۔ وکلاء نے بتایا کہ جلد جموں و کشمیر لائر فورم کا باقاعدہ کنونشن کرایا جائے گا جس میں لائر فورم کی پوری باڈی تشکیل دے کے جدوجہد کو آگے بڑھایا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں