Advertisements
جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کا 4 اکتوبر کو ایل او سی کراس  کرنے کا اعلان : دیگر سیاسی جماعتوں سے رابطے ، حامد میر نے اہم خبر دیدی۔ 300

جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کا 4 اکتوبر کو ایل او سی کراس  کرنے کا اعلان : دیگر سیاسی جماعتوں سے رابطے ، حامد میر نے اہم خبر دیدی۔

اسلام آباد۔

جموں کشمیر لبریشن فرنٹ نے 4 اکتوبر  طکوٹھی سے لائن آف کنٹرول توڑنے کا اعلان کر دیا ۔ فریڈم مارچ مین دیگر سیاسی جماعتوں سے بھی رابطے کئے جارہے ہیں : سینیر صحافی حامد میر کا ٹویٹ ۔

سینیر صحافی اور تجزیہ نگار حامد میر نے اپنے ٹویٹ میں کہا کے جموں کشمیر لبریشن فرنٹ نے 4 اکتوبر کو چکوٹھی سے لائن آٖف کنٹرول کراس کرنے کا اعلان کر دیاانہوں نے اپنے ٹویٹ میں کہا کے یہ اعلان جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے قائم مقام چیرمین عبدالحمید بٹ نے کیا ہے عبدالحمید  پہلے بھی 13 سال انڈین جیل  کاٹ چکے ہیں ۔

یاد رہے عبدالحمید بٹ  قائد کشمیر ، محسن کشمیر ” مقبول احمد بٹ شہید ” کے  قریبی ساتھی رہئے ہیں 4 اکتوبر کے فریڈم مارچ کی قیادت  قائم مقام جموں کشمیر لبریشن فرنٹ عبدالحمید بٹ کریں گے ۔

جموں کشمیر لبریشن فرنٹ آزادی پسندوں کی سب سے مقبول ترین جماعت ہے جسکے بانی امان اللہ خان مرحوم تھے اس وقت جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے چیرمین محمد یاسین ملک ہیں جو بھارت کی بدنام زمانہ تہاڑ جیل میں اذیت ناک زندگی گزار رہے ہیں یاسین ملک وہ ممتاز رہنما ہیں جہنوں نے اپنی زندگی کا بیشتر حصہ بھارتی جیلوں میں ہی گزارا بھارت نے یاسین ملک پہ ظلم کے پہاڑ ڈھائے مگر اس مرد مجائد کے جذبہ آزادی میں کمی نہیں لا سکا ۔

5 اگست کو بھارت کی جانب سے آرٹیکل 370 اور 35 اے کی منسوخی، غیر آئینی اور غیر جہموری اقدام کے بعد 60 دنوں سے کرفیو نافذ ہے بھارتی مقبوضہ کشمیر اس وقت دنیا کی سب سے بڑی جیل بن چکا ہے جسمیں 80 لاکھ لوگ اپنے گھروں میں قید ہیں جو کھانے پینے کی ایشیا، ادویات سے  بھی محروم ہیں ۔

بھارتی مقبوضہ کشمیر میں تمام مواصلاتی نظام بند ہے ۔ 5 اگست کے بعد گوگل سرچ میں لفط”کشمیر ” ٹاپ پہ ہے دنیا بھارت کے ظلم کے بارے میں جاننا چا رہی ہے مگر مواصلاتی نظام کی بندش کے باعث دنیا بھارتی ظلم کے بارے میں نہیں جان پا رہی ۔

خواتین تنظیموں نے بھارتی مقبوضہ کشمیر کا دورہ کیا ان کی رپورٹ کے مطابق 13000 نوجوانوں کو 5 اگست کے بعد گرفتار کیا گیا ہے ۔ اس ساری صورتحال کے پیش نظر جموں کشمیر لبریشن فرنٹ نے 4 اکتوبر کو  لائن آف کنٹرول توڑنے کی کال دی ہے جسکی تیاریاں عروج پر ہیں لگ یہ رہا ہے کے لاکھوں کی تعداد میں لوگ نکلیں گے اور دنیا کی توجہ اس طرف مبذول کرائیں گے کے کشمیری اس خونی لکیر کو نہیں مانتے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں