Advertisements
آزادی مارچ حالات خراب ہونے کی صورت میں فوری طور پر کیا کیا جائے گا ؟ خبردار کر دیا گیا ۔ 71

آزادی مارچ حالات خراب ہونے کی صورت میں فوری طور پر کیا کیا جائے گا ؟ خبردار کر دیا گیا ۔

اسلام آباد ۔

اسلام آباد کی مقامی انتظامیہ نے حساس ترین علاقے ریڈزون میں ٹرپل ون بریگیڈ کو تعنیات کی درخواست دے دی  آزادی مارچ کے شرکا کی تعداد اور سیکورٹی انتظامات کے حوالے سے پولیس اور اسلام آباد کی انتظامیہ ابہام کا شکار نظر آئی ۔ پولیس حکام کا کہنا ہے کے جلسہ گاہ میں 25 سے 30 ہزار افراد کی گنجائش ہے تاہم شرکا کی تعداد زیادہ ہونے کی صورت میں کوئی پلان ہی موجود نہیں پولیس حکام کا کہنا ہے کے حالات خراب ہونے کی صورت میں فوری طور پر پلان ترتیب دیا جائے گا 

جبکہ پشاور موڑ جلسہ گاہ کے گرد خاردار تاریں بھی لگائی جائیں گی اسلام آباد کے حساس علاقے میں داخلی و خارجی راستوں پر ساڑھے پانچ ہزار کینٹنرز لگائے گئے ہیں ۔ جبکہ حالات خراب ہونے کی صورت میں 10 ہزار آنسو گیس شیلز کا مطالبہ کر دیا گیا ہے اسلام آباد کے علاقے میں انٹرنٹ سروس معطل کر دی گئی ہے تاہم وزیر داخلہ نے اس سے لا علمی کا اظہار کیا ہے ۔ دھرنے میں اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں سمیت ہزاروں کی تعداد میں کارکنان جمع ہونا شروع ہو چکے ہیں کہا یہ جا رہا ہے کے آزادی مارچ حکومت کے لئے خاصی مشکلات پیدا کر سکتا ہے آزادی مارچ کے شرکا سے نمٹنے کے لئے پولیس الرٹ ہے حالات خراب ہونے کی صورت میں پلان ترتیب دیا جائے گا 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں