Advertisements
Free Business Listing
107

جموں کے ہندو اکثریتی  علاقے بھی جموں کشمیر کو یونین ٹیریٹوری کا درجہ دینے کے خلاف ہیں۔

جموں۔

بھارتی جنتا پارٹی کو اس وقت شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا جب جموں کشمیر یونین ٹیریٹوری بنانے کا جشن بنانے والے بی جے پی کے رہنماؤں کو مقامی لوگوں کے غم و غصے کا سامنا کرنا پڑا وہ ان لوگوں کے حقوق کا تحفظ کرنے میں نا کام رہے ۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بی جے پی کے رہنماؤں نے لوگوں سے وعدہ کیا تھا کے 5 اگست کے بعد جموں کشمیر کو یونین ٹیریٹوری کا درجہ دیا جائے گا تو جموں کے خطے کے عوام کے زمین اور سرکاری نوکریوں کے حقوق کا تحفظ کیا جائے گا لیکن بھارتی حکومت کی طرف سے جاری کئے جانے والے سرکلر میں اس کا کوئی زکر نہیں۔

اطلاعات کے مطابق بی جے پی کی طرف سے وعدہ پورا نہ کرنے پر شدید مشکلات کا سامنا ہے بی جے پی کے رہنماؤں نے جموں کے مختلف مقامات پر جشن کی تقریب کا انقعاد کیا تو مقامی لوگوں نے غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے تقریبات کا بائیکاٹ کیا کے ان کے حقوق کا تحفظ کرنے میں بی جے پی مکمل طور پر ناکام رہی ہے بی جے پی کے رہنماؤں کو جموں سے زبردست قسم کی مذمت کا سامنا ہے 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں