Advertisements
نماز پڑھنے کے بعد انسان خود کو انتہائی پرسکون کیوں محسوس کرتا ہے ؟ملائشیا میں کی گئی ایک تحقیق کا سامنا آگیا کے آپ بے اختیار سبحان اللہ کہہ اٹھیں گے ۔ 142

نماز پڑھنے کے بعد انسان خود کو انتہائی پرسکون کیوں محسوس کرتا ہے ؟ملائشیا میں کی گئی ایک تحقیق کا سامنا آگیا کے آپ بے اختیار سبحان اللہ کہہ اٹھیں گے ۔

لاہور مانیٹرنگ ڈسک۔

سائسندان اسلامی عبادات کے بارے میں کچھ اہم سوالات رکھتے ہیں جن کا جواب ملائشیا میں کی گئی ایک تحقیق میں سامنے آیا یونیورسٹی آف ملائشیا کے ڈپارٹمنٹ برائے بائیو میڈیکل انجینرنگ نے نماز کے انسانی ذہین اور جسم پر اثرات کا سائنسی مطالعہ کیا جس کے نتائج اس قدر حیران کن تھے کے اس تحقیق کو بین الاقوامی شہرت یافتہ سائنسی جریدے میں شائع کرنے کی درخواست کر دی گئی ۔

یونیورسٹی کی ایک ٹیم نے سینیر سائنسدان حازم دوفیش کی قیادت میں ایک تحقیق کی جسمیں نماز میں مصروف افراد کے دماغ کے فرنٹل ، سینٹرل ، ٹیمپرل ، پرائٹل  اور آکسیپٹل نامی  حصوں کے ساتھ ایگ مانیٹر منسلک کیے اور نماز کے مختلف مراحل کے دوران دماغ میں موجود توانائی کے سیگنلز کا مطالعہ کیا ۔

تحقیق کے نتائج سے معلوم ہوا کے دوران نماز بلحصوص سجدے کے دوران دماغ میں ایلفا ویو ایکٹویٹی میں نمایاں اضافہ ہوا  ایلفا ویو کی کثرت دماغ کے پرائٹل اور آکسیپٹل حصوں میں نظر آئی جو کے دماغ کے بالائی اور عقبی حصوں میں واقع ہوتے ہیں ۔

سائنسدانوں کا کہنا ہے کے بار بار کے تجربات کے دوران ایسی ہی صورتحال نظر آٗئی اگرچہ دیگر مراحل کے دوران ایلفا ویوز میں نسبتاکم اضافہ ہوتا تھا لیکن سجدے کے دوران ایلفا ویو ز کے سیگنلز عروج پر پہنچ جاتے ہیں ۔

ایلفا ویوز انسانی دماغ میں سکون اطیمنان اور خوشی کے جذبات پیدا کرتے ہیں یہ روز مرہ زندگیوں کے مشکلات اور تکلیفوں کے شکار دماغ کو پر سکون کرنے اور انسانی توجہ اور صلاحیتوں کو نکھارنے میں بھی اہم کردار ادا کرتی ہیں ۔

ماہرین کا کہنا ہے کے یہ تجربات ظاہر کرتے ہیں نفسیاتی اور ذہینی مسائل کے حل کے لئے مہنگے اور منفی نتائج کے حامل علاج سے کئی زیادہ بہتر اور آسان نسخہ نماز ہے ۔

دلچسپ بات یہ کے مغرب کے متعدد جرائد نے بھی اس تحقیق کے بارے میں مضامین شائع کئے اور اعتراف کیا ہے کے اس بات کے سائنسی شوائد ملے ہیں کے مسلمانوں کی عبادت ، دماغ میں ایلفا ویو ایکٹیویٹی کو نماٰیاں طور پر بڑھا دیتی ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں