Advertisements
killed.The First Doctor who diagnose Corona Virus 120

سب سے پہلے کرونا وائرس کی تشخیص کرنے والا ڈاکٹر پر اسرار طور پر موت کا شکار۔

ووہان/چین:

سب سے پہلے کرونا وائرس کی تشخیص اور اس کے علاج کی کوشش شروع کرنے والا ڈاکٹر خود موت کا شکار ہو گیا۔

تفصیلات کے مطابق 34 سالہ ون لیانگ ووہان ہسپتال میں ڈاکٹر تعینات تھا جہاں اس نے دسمبر کے ماہ میں ہی کرونا وائرس کی موجودگی کی تشخیص کی اور اس کی اطلاع اپنے ساتھی ڈاکٹروں کو دی۔  ڈاکٹر ون لیانگ ووہان کے سینٹرل ہسپتال میں تعینات تھا اور پچھلے ڈیڑھ ماہ سے کرونا وائرس کی تشخیص کے بعد اس کے مریضوں کے علاج میں مصروف تھا کہ اچانک خود موت کہ منہ میں چلا گیا۔

ڈاکٹر ون لیانگ کی موت  کی وجہ مریض سے کرونا وائرس کی ون لیانگ میں منتقلی بتائی جا رہی ہے۔  ڈاکٹر ون لیانگ نے دسمبر میں جب اس وائرس کی تشخیص کی اور اپنے ساتھی ڈاکٹروں کو اس سے مطلع کیا تو ان کے پیغامات سوشل میڈیا پر لیک ہو گئے جس کے باعث پورے چائنہ میں افراتفری کی سی صورتحال پیدا ہو گئی۔ اس ساری صورتحال کے بعد چینی سکیورٹی اداروں نے ڈاکٹر ون لیانگ کو طلب کیا اور بازپرس کے بعد ان کو آئندہ ایسی کوئی بھی بات نہ کرنے یا پھیلانے کی تلقین بھی کی جس کے بعد  ون لیانگ کو زبردستی ایک دستاویز پر بھی دستخط کرنا پڑے کے وہ آئندہ ایسی کوئی بھی معلومات کسی سے شیئر نہیں کریں گے ۔

ڈاکٹر ون لیانگ اس تمام واقع کے بعد بھی مسلسل مریضوں کے علاج اور دیکھ بھال کی کوششیں کرتے رہے لیکن اب خود ایک مریض سے کرونا وائرس کی منتقلی کی وجہ  سے موت کا شکار ہو گئے۔

چین میں گزشتہ مہینہ سے پھیلنے والے اس وائرس کی وجہ سے مزید 73 ہلاکتیں ریکارڈ کی گئی ہیں  جبکہ وائرس کے پھیلاو اور ہلاکتوں میں اضافے کا سلسلہ جاری ہے، حکومت چین کی طرف سے اس وائرس کے پھیلاو کو روکنے کے لئے نئے ہسپتال بھی بنائے جا رہے ہیں۔ چین کے نیشنل ہیلتھ کمیشن کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران اس وائرس سے 73 لوگوں کی جان چلی گئی اور یہ  24 گھنٹوں میں اب تک  ریکارڈ کی گئی  ہلاکتوں کی سب سے ذیادہ تعداد ہے۔

  چین میں کرونا وائرس سے اب ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 563 ہو گئی ، عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس  اب تک دنیا کے 25 ممالک تک پھیل چکا ہے اور اس کی روک تھام کے لئے 67 کروڑ 50 لاکھ ڈالر کی رقم درکار ہے جو کہ کافی ذیادہ ہے لیکن اگر اس وائرس کی روک تھام کے اقدامات جلد از جلد  نہ کئے گئے تو یہ رقم بہت کم بھی ثابت ہو سکتی ہے۔ عالمی ادارہ صحت کے ڈائریکٹر جنرل کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس سے اس وقت تک متاثر ہونے والوں کی تعداد 28 ہزار سے تجاوز کر چکی ہے۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں