Advertisements
کشمیری تاجروں کا جی ایس ٹی سکواڈ کی طرف سے جاری انتقامی کارروائیاں بند کرنے کا مطالبہ۔ 761

کشمیری تاجروں کا جی ایس ٹی سکواڈ کی طرف سے جاری انتقامی کارروائیاں بند کرنے کا مطالبہ۔

سرینگر14جنوری۔

مقبوضہ کشمیر میں تاجر برادری نے سرینگر جموں شاہراہ پربھارت کی طرف سے مسلط کردہ گڈز اینڈ سروسز ٹیکس موبائل انفورسمنٹ سکواڈ کی طرف سے کشمیری تاجروں کے خلاف جاری انتقامی کارروائیوں اور انہیں ہراساں کئے جانے کی شدید مذمت کی ہے ۔

تفصیلات کے مطابق کشمیر اکنامک الائنس کے وائس چیئرمین اعجاز شاہ دھر نے سرینگر میں ایک بیان میں کہاہے کہ لکھن پور چیک پوسٹ کو ختم کرنے کے بعدسے کشمیری تاجروں کو جی ایس ٹی موبائل انفورسمنٹ اسکواڈ کی طرف سے غیرضروری طور پر ہراساں کیا جارہا ہے اور انکی سامان لے جانے والی گاڑیوں کو شاہراہ پر لکھن پورہ سے اودھمپور تک مختلف مقامات پر روک بار بار روکا جاتا ہے ۔ اگر گاڑیوں کے دستاویزات کے ساتھ سامان ضبط کرلیا جائے تو انہیں چھوڑوانے کیلئے جموں میں پرانے کمرشل ٹیکس ویجی لینس دفتر بھیجا جاتا ہے۔

انہوں نے کہاکہ تاجروں کی گاڑیوں کو بھی دس سے پندرہ دنوں تک غیرضروری طور پرروک لیا جاتا ہے اور بغیر کسی نوٹس کے بھاری جرمانے عائد کئے جاتے ہیں۔کشمیر اکنامک الائنس کے وائس چیئرمین نے کشمیری تاجروں کے خلاف انتقامی کارروائیاں بند کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہاکہ تاجروں کو گزشتہ پانچ ماہ سے مسلسل جاری بھارتی فوجی محاصرے اورپابندیوںکی وجہ سے پہلے ہی بھاری نقصانات کا سامنا ہے ۔

انہوں نے کہاکہ ہم اپنی تجارت بحال کرنے کیلئے انتھک کوششیں کر رہے ہیں تاہم اس طرح کی انتقامی کارروائیوں سے ہماری پریشانیوںمیں مزید اضافہ ہو رہا ہے ۔ انہوں نے متعلقہ انتظامیہ پر تاجر وں کے ساتھ روا رکھی جانیوالی کارروائیاں بند کرنے کا مطالبہ کیا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں