Advertisements
بھارتی مقبوضہ کشمیر میں بھارت کے نافذ کردہ فوجی محاصرے اور لاک ڈاﺅن کے آٹھ ماہ مکمل 148

کشمیر میں حالات معمول پر ہیں تو مودی حکومت ٹرمپ کے اعزاز میں وہاں تقریب کر کے دکھائے | کانگریس لیڈر

کانگرس لیڈر اور کرناٹکا کے سابق وزیر اعلی سدارامیا  کی طرف سے بی جے پی کو صدر ٹرمپ کے اعزاز میں مقبوضہ کشمیرمیں تقریب منعقد کرنے کا چیلنج 

نئی دلی 25 فروری (جے کے نیوز ٹاکس)

کانگریس کے سینئر رہنما اور کرناٹکا کے سابق وزیر اعلی سدارامیانے مقبوضہ کشمیر میں حالات معمول پر آنے کے بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت کے دعوے پر سوال اٹھاتے ہوئے بی جے پی سے کہا ہے کہ وہ وادی کشمیرمیں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اعزاز میں تقریب منعقد کرکے مقبوضہ علاقے میں صورتحال معمول پر آنے کے اپنے دعوے کو درست ثابت کرے ۔

تفصیلات  کے مطابق سدارامیانے ایک ٹویٹ میں کہا کہ اگر بی جے پی کو لگتا ہے کہ کشمیر میں معمول پر آگئے ہیں اورحکومت وہاں تشدد کے واقعات میں ملوث نہیں ہے تو اسے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے اعزاز میں کشمیر میں تقریب منعقد کرکے اپنے دعوﺅںکو ثابت کرناچاہیے ۔

سدارامیانے جو کرناٹک اسمبلی میں قائد حزب اختلاف ہیں ایک اور ٹویٹ میں ٹرمپ کے دورے سے قبل کچی آبادی کے منظر کو چھپانے کیلئے احمد آباد کے ہوائی اڈے کے قریب تعمیر کی گئی طویل دیوار پر وزیر اعظم نریندر مودی کو تنقیدکا نشانہ بنایا۔

امریکی صدر ٹرمپ خاتون اول میلانیا ٹرمپ اور اعلی سطح کے ایک وفد کے ہمراہ پیر کے روز بھارت کے دورے پر پہنچے تھے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں