Advertisements
بھارت نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعدہزاروں سیاسی رہنماؤں کو گرفتارکیا: امریکی محکمہ خارجہ کی رپورٹ۔ 164

بھارت نے کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے کے بعدہزاروں سیاسی رہنماؤں کو گرفتارکیا: امریکی محکمہ خارجہ کی رپورٹ۔

واشنگٹن (جے کے نیوز ٹاکس )

امریکی محکمہ خارجہ کی طرف سے جاری ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بھارتی حکام نے گزشتہ سال 5 اگست کو مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کی منسوخی کے بعدمقبوضہ علاقے میں سیاسی رہنماؤں سمیت ہزاروں کشمیریوں کو گرفتار، موبائل اور انٹرنیٹ سروسز معطل اور کشمیریوں کی نقل و حرکت پر پابندی عائد کر دی ۔

تفصیلات کے مطابق انسانی حقوق کی صورتحال کے بارے میں 2019 کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بھارت میں مذہب اور سماجی حیثیت کی بنیاد پر اقلیتوں کوفرقہ ورانہ تشدد اور امتیاز کا نشانہ بنایا جارہا ہے۔

یہ پورٹ امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے یہ سالانہ رپورٹ کانگریس کی تائید سے جار ی کی ہے ۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بھارتی حکام نے مقبوضہ کشمیر میں پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا اور کتابوں کی اشاعت یا تقسیم پر پابندی عائد کررکھی ہے۔

متعدد صحافیوں کے مطابق گزشتہ سال کے دوران آزادی صحافت بری طرح متاثر ہو ئی ہے ۔

صحافیوں اور این جی اوز کی متعدد رپورٹس میں کہاگیاہے کہ مقبوضہ کشمیر اور بھارت کے سرکاری عہدیدار، تنقید کرنے والے میڈیا کے اداروں کو خاموش یا خوفزدہ کرنے ، مالکان پر دباﺅ بڑھانے ، موبائل فون، کیبل ٹی وی اور انٹرنیٹ سمیت مواصلاتی سروسز معطل کرنے اور آزادانہ نقل و حرکت پر پابندی عائد کرنے میں ملوث تھے۔

امریکی رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ غیر ملکی ماہرین اور دانشوروں پر مقبوضہ کشمیر جانے اور وہاں سرگرمیاں کرنے پر بھی پابندی عائد کر دی گئی ہے ۔رپورٹ میں انسانی حقوق سنگین کی پامالیوں کی نشاندہی کی گئی ہے جن میں پولیس کی طرف سے ماورائے عدالت قتل ، قید خانوںمیں ظلم و تشدد ، جبری گرفتاریاں اور نظربندی شامل ہیں۔

رپورٹ میں وزارت خارجہ نے بعض بھارتی ریاستوں میں سیاسی نظربندیوں ، صحافیوں کی بلاجواز گرفتاریوں، ان پر تشدد یا انکے خلاف مقدمات ، سنسر شپ،سوشل میڈیا اورویب سائٹ بلاک کرنے سمیت آزادی اظہار رائے کی آزادی اور آزادی صحافت پر قدغن پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ بھارت میں عہدیداروں کی بدچلنی اور بد انتظامی پر جوابدہی کا فقدان حکومت کی تمام سطحوں پر پایا جاتا ہے۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں