Advertisements
Kashmiri Students at Banglore airport. 57

کشمیری طلباء انڈیا کے ہوائی اڈوں پر بے یارو مددگار۔

کشمیری طلبا بنگلورو ہوائی اڈے پر ذلیل و خوار

بنگلورو (جے کے نیوز ٹاکس)کوروناوائرس کو مزید پھیلنے سے روکنے کے لیے حکومت کی جانب سے ریاستوں کے مابین جوڑنے والی شاہراہیں سیل کر دی گئی ہیں۔

ساوتھ ایشین وائر کے مطابق بنگلورو کے مختلف نجی و سرکاری کالجوں میں زیر کشمیری تعلیم طلبا نے بنگلورو ہوائی اڈے کے باہر ایک احتجاجی مظاہرہ کیا جس میں وہ بنگلورو سے واپس کشمیر آنے کا مطالبہ کر رہے تھے۔حکومت نے تمام ہوائی پروازیں 31 مارچ تک ملتوی کی ہیں جس کی وجہ سے مختلف شہروں میں سینکڑوں کشمیری طلبا پھنسے ہوئے ہیں۔

سکینہ کفایت نامی ایک طالبہ کا کہنا تھا کہ گھر سے باہر ان حالات میں رہنا ان کے لئے موزوں نہیں ہے۔ اور ان کے اہل خانہ کافی پریشان اور فکر مند ہیں۔بنگلورو کے مختلف کالجوں میں زیر تعلیم ان طلبا کا کہنا تھا کہ انہوں نے ان پر آشوب حالات کے دوران بھی ہزاروں روپے خرچ کرکے ہوائی سفر کی ٹکٹیں خریدیں ہیں تاہم حکومت کی جانب سے پروازوں کو منسوخ کیا گیا ہے جو ان کے لئے مشکل ترین مرحلہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں