Advertisements
Pakistan decided to adopt chines model to handle the corona virus patients. 264

خوشخبری: پاکستان نے کرونا وائرس سے نمٹنے کے لئے کامیاب "چینی” ماڈل اپنانے پر غور شروع کر دیا۔

پاکستان  میں ماہر ین صحت اور وزارت صحت کے درمیان کرونا سے صحتیاب ہونے والے مریضوں کا پلازمہ بطور علاج استعمال کرنے پر مشاورت جاری۔

لاہور (جے کے نیوز ٹاکس) پاکستان میں چین کی طرز پر کرونا وائرس سے صحتیاب ہونے والے مریضوں کا پلازمہ علاج کے لئے استعمال کرنے پر غور شروع۔  چین میں کرونا وائرس سے شدید متاثرہ افراد کے علاج کے لئے اسی کرونا وائرس سے صحتیاب ہونے والے مریضوں کے خون کا پلازمہ لگایا گیا تھا جس کے بہتر نتائج ملے تھے جس کے بعد امریکی ماہرین صحت نے بھی کرونا جیسی موذی وباء سے نمٹنے کے لئے اسی ماڈل کو اپنانے کا مشورہ دیا تھا جبکہ پاکستان میں بھی اسی ماڈل پر عملدرآمد کے لئے ماہرین سے مشاورت جاری ہے جس کے حوالے سے اہم اعلان  آئندہ 36 گھنٹوں میں متوقع ہے ۔

صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد نے امراض خون کے مشہور پاکستانی ڈاکٹر طاہر شمسی سے اپنے رابطوں کی تصدیق کی ہے۔ ڈاکٹر طاہر شمسی کے مطابق جو لوگ پہلے اس وائرس میں مبتلاء ہونے کے بعد صحتیاب ہوئے ہوں ان کا بلڈ پلازمہ اس مرض سے شدید متاثرہ افراد کو لگایا جاتا ہے جس سے مریض صحیتاب ہونا شروع ہو جاتا ہے۔

ڈاکٹر طاہر شمسی کے مطابق اس طرح کا طریقہ علاج 1890 سے دنیا میں رائج سے جس سے مریض کی صحتیابی کے 96 فیصد چانسز ہوتے ہیں اور جو لوگ پلازمہ کے ڈونر ہوتے ہیں ان کے جسم سے 500 سے 900 ملی لیٹر پلازمہ لیا جاتا ہے ، ایک صحتمند فرد سے لیا گیا پلازمہ ایک ہی مریض میں منتقل کیا جاتا ہے۔ ڈاکٹر طاہر شمسی کے مطابق پلازمہ دینے والے ڈونرز کو پلازمہ دینے سے سے کوئی فرق نہیں پڑتا بلکہ ایک شخص جو اس وائرس سے صحتیاب ہو جاتا ہے وہ ہر ہفتے پلازمہ ڈونیٹ کر سکتا ہے۔

ڈاکٹر طاہر شمسی کا کہنا ہے کہ اگر بروقت اس ماڈل پر علاج کا پروسس شروع کر دیا گیا تو پاکستان ذیادہ نقصان سے بچ سکتا ہے 

کرونا سے صحت یاب ہونے والے افراد کا پلازمہ کس طرح کرونا کے مریضوں کی مدد کر سکتا ہے؟

کرونا سے صحت یاب ہونے والے افراد کا پلازمہ کس طرح کرونا کے مریضوں کی مدد کر سکتا ہے؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں