Advertisements
بھارتی فورسز کشمیر میں طاقت کا وحشیانہ استعمال کر رہی ہیں۔ یورپی یونین کی رپورٹ 190

گزشتہ چوبیس گھنٹوں میں بھارتی مقبوضہ کشمیر میں فوج کے ہاتھو 9 کشمیری نوجوان شہید

چوبیس گھنٹوں میں نو(9)کشمیری شہید: بھارتی فوج

سرینگر(جے کے نیوز ٹاکس)اتوار کے روز ، بھارتی فوج نے بتایا کہ مقبوضہ جموں و کشمیر میں گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سیکیورٹی فورسز کے ساتھ دو الگ الگ جھڑپوں میں  9کشمیری نوجوانوں کو  شہیدکردیا گیا۔ہندوستانی فوج کی چنار کور نے ایک ٹویٹ میں کہاکہ کپواڑہ میں  اتوار کے روز پانچ نوجوانوں کو شہید کیا گیا۔کم از کم تین فوجی بھی زخمی ہوئے جو زخموں سے جانبر نہ ہو سکے۔ساوتھ ایشین وائر کے مطابق آرمی ذرائع نے بتایا کہ شدید برف باری اور خطے کے خطرہ کی وجہ سے زخمیوں کے انخلا میں رکاوٹ ہے۔فوج نے پورے علاقے کو محاصرے میں لے لیا۔فوجی ذرائع کے مطابق اتوار کی صبح کشمیر کے دو حصوں کو تقسیم کرنیوالی لائن آف کنٹرول پر فوج نے نقل و حرکت دیکھی جس کے بعد ایک علاقے کا محاصرہ کیا گیا۔

اس سے قبل ہفتے کی صبح مقبوضہ کشمیر میں جنوبی کشمیر کے ضلع کولگام میں ہفتے کے روز دمہال ہانجی پورہ کے نژگام گاوں ہارڈمنڈ گوری میں 4 نوجوان شہید صدام ملک ساکنہ ارونی کولگام، اعجاز احمد نائکو ساکنہ چندر، شاہد صادق ملک ساکنہ کھل نور آباد اور وقار احمد،ساکنہ چولگام، کولگام شہیدہوگئے۔پولیس نے کہا تھا کہ ان کا تعلق حزب المجاہدین سے ہے۔اس دوران 3 مکانات جل کر راکھ ہوگئے ۔جنوبی کشمیر کے مختلف علاقوں میں جمعے کی رات سے جگہ جگہ تلاشی کاروائیاں کی جارہی تھیں۔اورکئی دنوں سے سکیورٹی فورسز کی جانب سے مختلف علاقوںکا محاصرہ کیا جارہا تھا۔

 مقبوضہ جموں وکشمیر میں رواں سال 2020میں ان واقعات سے قبل تک سیکورٹی فورسز نے مختلف آپریشنز میں26واقعات میں45نوجوانوں کو شہید کیا ہے ۔جن میں جنوری میں 22،فروری میں 11اور مارچ میں 8افراد شہیدکئے گئے۔جبکہ 6سیکورٹی اہلکار اور8عام شہری ہلاک ہوئے۔

ہفتہ کی شام  تلاشی کے چوتھے دن ، سرکاری فوج اور مجاہدین کے درمیان ضلع کپواڑہ میں لائن آف کنٹرول کے ساتھ واقع رنگدووری بیہک علاقے میں فائرنگ کا تبادلہ ہوا۔ ہیلی کاپٹر جنگل کے علاقے پر منڈلاتے ہوئے بھی دیکھے گئے۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں