Advertisements
161

علی سوجل سے تعلق رکھنے والے میجر اصغر کے انتقال پر ہمسایہ ملک کے اہلکار بھی افسردہ ۔

اسلام آباد (جے کے نیوز ٹاکس )

پاکستان کے زیر انتظام کشمیر ضلع پونچھ علی سوجل سے تعلق رکھنے والے میجر اصغر کے انتقال پر طورخم بارڈر پر تعینات افغان اہلکار بھی افسردہ ۔

پاکستان میں پاک فوج میں کرونا وائرس سے 10 مئی کو پہلی شہادت ہوئی میجر اصغر طور خم بارڈر پر فرائض سرانجام دے رہے تھے انہیں سانس کی تکلیف کے باعث سی ایم ایچ پشاور لایا گیا اور وینٹی لیٹر پر منتقل کیا گیا لیکن وہ جانبر نہ ہو سکے ۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے اس عزم کا اظہار کیا کے قوم کی خدمت سے بڑھ کر کوئی مقصد نہیں کرونا سے شکار میجر اصغر شہید کے قریبی ساتھی کا کہنا تھا کے جب بھی میجر اصغر سے ملا ہمیشہ ہنستا ہوا دیکھا وہ طبعیت کے اعتبار سے نہایت ہی خوش اخلاق اور ہنس مکھ تھے ۔

طورخم بارڈر پر تعینات افغان اہلکار بھی میجر اصغر کو پاکستان کے افسر کے ساتھ ساتھ اپنا افسر بھی کہتے تھے کیونکہ افغان سیکورٹی فورسز کے اہلکار میجر اصغر کے خوش اخلاق رویے سے متعرف تھے ۔

میجر اصغر کا تعلق پنجاب 34 رجمنٹ سے تھا وہ آج کل سی کے 143 سی ایس ونگ میں تعینات تھے اور طورخم بارڈر پر فرائض سرانجام دے رہے تھے ۔

میجر اصغر کا تعلق پاکستان کے زیر انتظام کشمیر ضلع پونچھ علی سوجل سے تھا لیکن وہ کافی عرصے سے کراچی میں رہائش پذیر تھے میجر اصغر نے سوگواران میں بیوی ایک بیٹا اور دو بیٹیاں چھوڑی ہیں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں