Advertisements
358

پاکستان انقلابی پارٹی کا لاہور میں بھرپور مُظاہرہ۔ نسل پرستی، نجکاری اور برامش بلوچ کے قتل کی ذمہ دار امریکی سامراجی ریاست ہے  : پاکستان انقلابی پارٹی۔

( لاہور جے کے نیوز ٹاکس )
۱۲ جوُن ۲۰۲۰ کی شام، لاہور پریس کلب کے سامنے پاکستان انقلابی پارٹی نے زبردست مُظاہرہ کیا۔

پارٹی سیکرٹری صابر علی حیدر کا کہنا تھا کہ لاک ڈاؤن کی احتیاطی تدابیر کو مدِ نظر رکھتے ہوئے مُظاہرے میں صرف لاہور کے عہدیداران کو مدعو کیا گیا تھا ، لہٰذہ اِسے عوامی جلسہ نہ سمجھا جائے۔
مُظاہرے سے پاکستان انقلابی پارٹی کے مشتاق چوہدری، رشید مصباح، طفیل ڈھانہ، صابر علی حیدر اور رفیق پہلوان نے خطاب کیا جبکہ این ایس ایف کی نمائندگی پنجاب کی آرگنائزنگ باڈی کے رکن اور اوکاڑہ کے ضلعی صدر پرویز عارف سلطانی نے کی۔
مقررین کا مؤقف تھا کہ پاکستان انقلابی پارٹی اور اس کا طلبہ ونگ این ایس ایف ۔ پاکستان سمجھتی ہے ملک کو ایک جزیرے کی طرح نہیں چلایا جا سکتا۔ انہوں نے وزارتِ خارجہ پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ وزیرِ خارجہ شاہ محمود قریشی، جن کے والد جنرل ضیاء کے چُنے ہوئے گورنر پنجاب رہے اور خود وہ بھی ہر حکومت کے ساتھ رہے، خود کئی مرتبہ کہہ چکے ہیں کہ امریکی چندے کے بغیر ان کا حکومت بنانا نا ممکن تھا۔ مقررین نے سوال اُٹھایا کہ کیا امریکہ سے پاکستان کا تعلق صرف چندہ وصول کرنے کا ہے؟ کیا امریکہ میں بسنے والے کروڑوں محنت کشوں سے پاکستان کا کوئی تعلق نہیں؟ انہوں نے کہا کہ اس وقت امریکی سامراج کی نسل پرستانہ پالیسیوں کی قلعی کھل کے سامنے آ گئی ہے۔ نہ صرف سیاہ فام مزدور جارج فلائڈ کا قتل ہوا بلکہ احتجاج کرنے والے نہتے عوام پر بھی نجی غنڈوں کے ذریعے حملے کروائے گئے۔ ٹرمپ انتظامیہ نے یہ بھی کوشش کی امریکہ میں احتجاج کرنے والوں کا قلع قمع کرنے کے لیئے ’’آئینی مارشل لاء‘‘ نافذ کر دیا جائے۔ مگر ٹرمپ انتظامیہ یاد رکھے کہ امریکی سامراج کے خِلاف یہ تحریک اب عالمی تحریک بن چکی ہے اور اِس میں اب شدت آئے گی۔ این ایس ایف پاکستان جیسے نہر سوئز کے مسئلے پر، کانگو کے پیٹرس لوممبا کی شہادت پر اور جبل پور کے شہدا کے حق میں کامیاب مُظاہرے کر چکی ہے، اب بھی پاکستان انقلابی پارٹی کی کال میں ملک بھر میں مظاہرے کرنے کو تیّار ہے۔ مظاہرین نے مطالبہ کیا پاکستان کی وزارتِ خارجہ جارج فلائڈ کے حق میں اور نسل پرستی کے خلاف پاکستان کا احتجاج ریکارڈ کروائے۔ ورنہ پاکستان میں بھی No Justice, No Peace یعنی ’’انصاف نہیں تو امن بھی نہیں‘‘ کی تحریک چلائیں گے۔
مقررین کا کہنا تھا کہ پاکستان انقلابی پارٹی کا مزدور ونگ پاکستان اسٹیل مل کی نجکاری پر اپنا تجزیہ مکمل کر چکا ہے۔ ساڑھے نو ہزار ملازمین کی برطرفی برداشت سے باہر ہے۔ آئی ایم ایف کے پروردہ بائیس خاندانوں پر مشتمل حکمران طبقات کو پاکستان اسٹیل مل سے ملحقہ سترہ سو ایکڑ قیمتی زمین نہیں بیچنے دیں گے۔ پاکستان سٹیل مل کے ملازمین خود کو تنہا نہ سمجھیں، پاکستان کے ۲۲ کروڑ عوام ان کے ساتھ کھڑے ہیں۔ پاکستان انقلابی پارٹی کے ہزاروں کارکنان وقت آنے پر حکمرانوں کو مزدور کی طاقت دکھائیں گے۔
مقررین کا کہنا تھا پاکستان کی قومی دولت لوٹ کر آف شور کمپنیوں میں ڈالنے والے سبھی چوروں کا احتساب کا اعلان آج کر دیا ہے۔ ان کا کہنا تھا یہ چور سبھی سرمایہ دار سیاسی جماعتوں کا شروع سے ہی حصہ ہیں۔ وہ ابھی سے اپنے ’’آف شور محلات‘‘ میں خود کو محفوظ کر لیں کیونکہ جب تاج اچھالیں جائیں گے اور تخت گرائے جائیں گے، تب اِن کو کوئی جائے مفر نصیب نہ ہو گی۔ اناالحق کا نعرہ بلند کر دیا ہے۔
مقررین کا کہنا تھا برامش بلوچ اِس قوم کی بیٹی ہے اور اس کے لیئے انصاف مانگنا ہر انقلابی پر فرض ہے۔ مقتدر طبقات پشتونوں اور بلوچوں کو دیوار سے لگانے کی کوشش کر رہے ہیں مگر اب نہیں۔ اب پاکستان انقلابی پارٹی میدانِ عمل میں ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اقتدار کے نشے میں اندھے حکمرانوں کو نوشتہء دیوار نظر نہیں آ رہا۔ ان کا کہنا تھا ’’عہدِ حاضر کے سول ایوب خان‘‘ کو عہدِ گم گشتہ کے ’’فوجی ایوب خان‘‘ کی تاریخ پڑھ لینی چاہیئے تھی۔ جیسے این ایس ایف پاکستان نے عوامی حمائت کے ساتھ اُسے اقتدار سے ہٹایا تھا، پاکستان انقلابی پارٹی اس سے سو گنا ذیادہ طاقت کے ساتھ عوامی حقوق کی پہریداری کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ ارتقاء کا پہیہ الٹا نہ گھوم سکتا ہے نہ گھوما ہے بلکہ اب عوامی جمہوری طاقتوں نے اپنی صفوں سے مفاد پرستوں کا خاتمہ کر دیا ہے لہٰذہ اب کوئی جاگیردار گروپ جمہوریت کے نام پر انہیں ان کو راہِ فرار بھی نہیں دے سکے گا۔ جمِ سرفروشاں اُٹھ چکا ہے، اب دارو رسن کے لالے پڑیں گے۔ شورِ محشر بپا ہوگا اور روزِ حساب دور نہیں۔
عوام تیار رہیں، جلد ہی ایک ایک در پر حاضری دے کر مقتدر طبقات کی سازشوں کا پردہ فاش کریں گے اور عوام کو اس طاقت کا بتائیں گے۔
مظاہرہ مقررہ وقت پر ختم ہوا اور مظاہرین ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے SOP کے کی پاسداری کرتے ہوئے، پر امن طور پر منتشر ہو گئے۔ پارٹی سیکرٹری صابر علی حیدر نے کہا کہ آئیندہ لایحہء عمل کا اعلان جلد کیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں