Advertisements
202

کرم ایجنسی کی ضلعی انتظامیہ کو تفرقہ بازی کو اوٹ نہیں لینے دیں گے: مجاہد حسین طُوری۔

اسلام آباد : جے کے نیوز ٹاکس 
پاڑہ چِنار، ضلع کرم کے نوجوانوں نے پر امن احتجاج کا دائرہ دارالخلافہ تک بڑھا دیا۔ پاکستان انقلابی پارٹی کے مرکزی رہنماء مجاہد حسین طوری نے میڈیا کو بتایا کہ زمین کے تنازعے نے علاقے میں خانہ جنگی کی صورتحال پیدا کر رکھی ہیں۔

بالش خیل میں بھاری ہتھیاروں کے آزادانہ استعمال کے خلاف کئی لوگ جاں بحق ہو چکے ہیں مگر ضلعی انتظامیہ خاموش تماشائی بنے بیٹھی ہے اور اسے فرقہ وارانہ فساد قرار دے رہی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر ریاست عوام کو امن فراہم نہیں کر سکتی، لوگوں کے جان و مال کی حفاظت نہیں کر سکتی اور اس کے برعکس زمین پر قبضے کے تنازعہ کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کی کوشش کرتی ہے تو ہم اِس ریاست کو سامراج کی پروردہ ریاست کیونکر نہ سمجھیں؟
ان کا کہنا تھا کہ فریقین کے درمیان سرکار کی نگرانی میں معاہدے ہوچکے ہیں۔ زمینی تنازعے کو ریوینو ریکارڈ کے مطابق حل کرنے کا فیصلہ ہو چکا تھا۔ مگر مقامی سرکاری انتظامیہ معاہدوں پر عمل درآمد کرنے میں تاخیری حربے استعمال کرتی رہی۔ ان کا کہنا تھا جنگ بندی کروانا اور سرکاری محکمہء مال کے تحت انصاف فراہم کرنا انتظامیہ کی ذمہ داری تھی مگر سرکار کے تاخیری حربوں کے باعث جاں بحق ہونے والے افراد کو باالواسطہ سرکاری قتل کہا جائے گا۔
یہ انتظامیہ ہمارے تو انٹرنیٹ بند کر چکی ہے مگر یاد رکھے کہ پاکستان انقلابی پارٹی کوئی مقامی گروہ نہیں بلکہ پاکستان کے چپے چپے میں پائی جاتی ہے۔ پورے پاکستان میں زمین کے تنازعے کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کا ذمہ دار ضلعی انتظامیہ کو ٹھہرائیں گے۔
انہوں نے کہا کہ جنگ بندی تو ہمارا بنیادی مطالبہ ہے ہی مگر ضلع کرم کے امن کو ثبوتاژ کرنے والے خارجی عناصر جو علاقہ غیر سے آکر مقامی شیعہ سنی قبائل کی زمینوں پر قابض ہیں ان کو علاقے سے فوری بے دخل کیا جائے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ ضلع کرم کے مقامی طوری بنگش قبائل کے ساتھ سول انتظامیہ اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کا رویہ انتہائی نامناسب اور متعصبانہ ہے لہذا علاقے کے عوام کے حقوق کی راہ میں روکاوٹیں ڈال کر پرامن قبائل کو ریاست کیخلاف اکسانے کی سازش کر رہے ہیں ان افسران کیخلاف فوری کاروائی کرکے معطل کیا جائے ورنہ پاکستان انقلابی ملک بھر میں راست اقدام پر مجبور ہوگی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں