Advertisements
تھوراڑ اور باغ میں پولیس گردی اور سیاسی رہنماؤں کی گرفتاریوں کی مذمت کرتے ہیں : سردار انور ایڈوکیٹ ۔ 150

انڈیا پاکستان کے درمیان ریاست جموں کشمیر کی بندر بانٹ تیسری عالمی جنگ کی طرف عملی قدم ہو گا، دیمک زدہ بیساکھیاں نہیں اختیار دیا جاٸے۔ سردار انور ایڈوکیٹ



دوبئی(جے کےنیوز ٹاکس )جموں کشمیر لبریشن فرنٹ کے سیاسی شعبہ کے سابق سربراہ سردار انور ایڈوکیٹ نے پاکستان کی طرف سے گلگت بلتستان کو غیر آینی صوبہ بنانا مودی کی مقبوضہ کشمیر سے370 اور 35A کے خاتمے کے اقدام کو درست قرار دینا ھے مودی باجوہ نیازی گٹھ جوڑ ریاست جموں کشمیر کی تقسیم کے حصہ دار ھیں..تاریخ میں کبھی بھی ظلم و جبر کی بنیاد پر غلام نہیں رکھا جا سکتا ھے ہمشہ ظلم و جبر کی کوکھ سے نئی تحریکوں کا جنم ھو تاھے گلگت بلتستان ایسا آتش فشاں پہاڑ ھے جو اگر پھٹ گیا تو دنیا تیسری عالمی جنگ کی لپیٹ میں آ سکتی ھے..بین اقوامی سامراج اور اس خطے میں اس کے سہولت کاروں اور آلہ کاروں کے منصوبوں کو سمجھنا ضروری ھے اس وقت حالات اور وقت کا تقاضہ ھے بھارت اور پاکستان کے غاصبانہ قبضے کے خلاف متحد ھو کر جدوجہد کرنا ھو گی..اس سلسلے میں اندرون ریاست اور بیرون ریاست جدید سانسی بنیاد پر تحریک کو استوار کرنا ھو گا دنیا بھر میں بھارت اور پاکستان اور اقوام متحدہ کے سفارت خانے اور دفاتر کے سامنے پر امن دھرنے دینے کی ضرورت ھے بھارت اور پاکستان کے حکمران طبقات اور ان کے کشمیری سہولت کار مسلہ کشمیر پر تجارت کر رھے ھیں اور ساراج اپنا اسلحہ فروخت کر رھے ھیں..سی پیک کی آڑ میں ریاست کی تقسیم اور سامراج مارکیٹ پر تقسیم کرنے کا نیا کھیل کھیل رھا ھے.. ھمیں بھارت پاکستان اور چین کے مزدورں کسانوں طلباہ صحافیوں وکلا سول سوسائٹی کو قائل کر کے مشرکہ جدوجہد کرنا ھو گی ایک خود مختار کشمیر بھارت پاکستان اور چین کے درمیان دوستی تجارت اور امن کا پل بن سکتا ھے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں